148

احسن خان صاحب کاانٹرویو

احسن خان غورغشتی کے سینئر تین سیاست دانوں میں سے ایک ہیں۔ آپ کا تعلق غورغشتی کے اعلیٰ تعلیم یافتہ گھرانے سے ہے ۔آپ کے والدماسٹر شینچی خان کا شمار چھچھ (غورغشتی) کی چیدہ شخصیات میں کیاجاتاتھا۔ جنہوں نے اپنے بیٹوں کی تعلیم پرخصوصی توجہ دی ۔جس کا نتیجہ بھی لوگوں نے اپنی آنکھوں سے دیکھا۔ احسن خان نے سیاست کاآغاز 1987 ؁ء میں کیا۔ جب وہ ضلع کونسل اٹک کے ممبر بنے۔ اس کے بعد آپ ممبر ضلعی احتساب بورڈ اٹک بھی خدمات پیش کرتے رہے۔ اس کے بعد آپ علاقہ چھچھ میں ’’متاثرین غازی بروتھہ تنظیم ‘‘ کاقیام بھی عمل میں لائے۔ بعدازاں آپ غازی بروتھہ ترقیاتی ادارہ کے ڈائریکٹر بھی بنے ، جو کہ چھچھ کے لوگوں کیلئے کسی اعزاز سے کم نہیں۔ احسن خان کا شمار پڑھے لکھے اور سمجھدار سیاست دانوں میں کیاجاتاہے۔ آپ کوشکار کا بھی بہت شوق رہاہے۔ شکار بھی آپ کی ایک وجہ شہرت ہے۔ آپ نے بحیثیت ممبر ضلع کونسل اور ڈائریکٹر GBTIحلقہ عوام کیلئے خدمات سرانجام دیں۔ آپ اور آپ کے بھائی اعظم خان ایم ڈی سوئی نادرن گیس نے غورغشتی میں سوئی گیس کی فراہمی کے سلسلہ میں اہم کردار ادا کیا۔ آپ نے اپنے سیاسی کیریئر میں ملک محمد اسلم، تاج محمد خانزادہ(مرحوم)، ملک امین اسلم اور کرنل(ر) شجاع خانزادہ کی بھرپور سپورٹ کی اور غورغشتی میں ان کی فتوحات میں کلیدی کردار ادا کیا۔ احسن خان سے میری جتنی بھی ملاقاتیں ہوئیں میں نے انہیں ایک سچااورپکا چھاچھی پایاجو چھچھ کی دھرتی سے بے پناہ محبت رکھتاہے ۔
س:نام /ولد یت ج:احسن خان /شاہنچی خان
س:تاریخ پیدائش/جائے پیدائش ج:جنوری1947 ؁ء/غورغشتی
س:قوم/قبیلہ ج:پٹھان/عنایت خیل
س:تعلیمی قابلیت ج:بی اے 1968 ؁ء گورنمنٹ ڈگری کالج اٹک
س:بچپن/لڑکپن کے مشاغل ج:شکار، حجرہ میں بڑوں کی محفل میں بیٹھنا
س:پسندیدہ کھیل /کھلاڑی ج:کرکٹ(اگر پاکستان کی ٹیم ہندوستان کے خلاف کھیلے)۔
س:پروفیشن ج:ٹرانسپورٹر ،زمینداری، سماجی خدمت(1972 ؁ء میں ٹرانسپورٹ کاکاروبار چھوڑ دیا)۔
س:پروفیشنل زندگی کاآغاز ج:12سال کی عمر میں والد صاحب کی وفات کے بعد سے1963 ؁ء میں16سال کی عمر میں ناردرن پنجاب ٹرانسپورٹ کاڈائریکٹر بنا دیاگیا ۔
س:پروفیشنل اچیومنٹس ج:1985,1984,1983,1968,1967ء اعزازی ضلعی گیم وارڈن ضلع اٹک محکمہ کاشتکار رہا۔1987 ؁ء تا1991 ؁ء ممبر ضلع کونسل اٹک رہا۔1991 ؁ء تا1993 ؁ء ممبر ضلعی احتساب بورڈ اٹک ،ممبر ضلعی ایڈوائزری بورڈ برائے زراعت1993 ؁ء تا2000 ؁ء متاثرین غازی بروتھہ علاقہ چھچھ کی تنظیم کاقیام عمل میں لایا۔1995 ؁ء سے تاحال صدر ہوں۔اِس کے علاوہ ممبر NGOسٹینڈنگ کمیٹی قائم شدہ بذریعہ ورلڈ بینک برائے متاثرین علاقہ کے مسائل حل کرنا۔بعدازاں غازی بروتھہ ترقیاتی ادارہ کاڈائریکٹر1996 ؁ء تا2003 ؁ء تک رہا۔ اس کے بعد2003 ؁ء تا2008 ؁ء ٹیکنیکل ڈائریکٹر بنا۔2008 ؁ء سے تاحال چیف ایگزیکٹو آفیسر غازی بروتھہ ترقیاتی ادارہ اپنی ذمہ داری ادا کررہاہوں ۔( نوٹ: حال ہی میں استعفیٰ دے دیاہے۔)
س:پروفیشنل خدمات ج:محکمہ شکار کے اعزازی ضلع اٹک کے گیم وارڈن کی حیثیت سے 10گنا زیادہ شکاریوں نے لائسنس حاصل کیے۔ ممبر ضلع کونسل کی حیثیت سے مویشیوں کاہسپتال غورغشتی میں قائم کروایا۔ غورغشتی تاگوندل سڑک کو پنجاب ہائی وے کے حوالے کر کے اُسے چوڑا کیاگیا اور ہر سال مرمت ہونے لگی۔ ضلعی احتساب بورڈ کے ممبر کی حیثیت سے اپنے فرائض ادا کیے۔ جس کے ممبران میں ایم این اے اور ایم پی اے تھے۔ بحیثیت ڈائریکٹر متاثرین غاز ی بروتھہ زمینوں کا معاوضہ3ارب بڑھایاگیا۔2003 ؁ء میں ڈائریکٹرGBTIاپنی سیٹ سے استعفیٰ دیا۔ اس کے علاوہ ہمارے خاندان نے علاقے کو سوئی گیس فراہم کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔ گلیاں نالیاں بھی پختہ کرائیں ۔وغیرہ وغیرہ۔
س:پسندیدہ عالم دین/سیاستدان/شاعر/صحافی(لوکل انٹرنیشنل) ج:شیخ الحدیث مولانا نصیر الدین صاحبؒ (غورغشتی)/سیاستدانوں میں خانزادہ تاج محمد خان (مرحوم )پسند تھے۔/علامہ اقبال اور کوئی بھی انقلابی قسم کے شعر کہنے والا شاعر پسند ہے ۔/ (لوکل صحافیوں میں جو بھی سچ لکھے)۔/ہارون رشید (صحافی)، حسن نثار(کالم نگار)
س:پسندیدہ شعر
آج موسیٰ ملے تو اطاعت کرو
اور فرعون سے تم بغاوت کرو
آج خاموش رہنا بڑا جرم ہے
دوستو آج شورِ قیامت کرو
س:پسندیدہ کتاب /مصنف ج:قرآن پاک۔
س:پسندیدہ کلاس فیلو/استاد ج:ریاض خان آف نرتوپہ،اعظم خان آف حضرو (مرحوم)،سیف الرحمان ملک ،جاوید مجید خان(حضرو)/۔۔۔۔
س:زندگی کا خوشگور ترین دن ج:جب عامر احسن خان میرے بیٹے نے غلام اسحاق خان انسٹیٹیوٹ سے
انجینئرنگ کی ڈگری لی ۔
س:زندگی کا ناخوشگور (غمگین) ترین دن ج:15جولائی1958 ؁ء جب میرے والد صاحب کی وفات ہوئی۔
س:زندگی کا یادگار ترین لمحہ یا واقعہ ج:9فروری1970 ؁ء جب میرے بھائی نے کینیڈا سے انجینئرنگ کی ڈگری لی۔
س:شدید ترین خواہش ج:صبح اُٹھوں تو پتاچلے کہ پاکستان میں ایسا لیڈر آگیا ہے۔ جو انصاف کے تحت نظام
چلائے گا۔
س:پسندیدہ رنگ /خوشبو/لباس ج:ہلکا سبز/ موتیا، رات کی رانی/شلوار قمیض۔
س:پسند یدہ سیاسی پارٹی ج:اِ س وقت کوئی نہیں۔
س:پسندیدہ ٹی وی چینل ج:ہر وہ چینل جو سچائی پیش کرے۔ مگر اسپیشلی شکار کے چینلChase & Peach
س:آپ کی نظر میں چھچھ کے اہم ترین مسائل ج:پانی کی نکاسی ،تعلیم میں عدم دلچسپی، تعلیم یافتہ نہ ہونا، پرانے رسم ورواج کو چھوڑنا ۔
س:آپ کی نظر میں سب سے بڑی نیکی ج:کسی کو حقیر نظر سے نہ دیکھنا۔
س:آپ کی نظرمیں سب سے بڑا گناہ ج:بے انصافی
س:کس بات پر سب سے زیادہ غصہ آتاہے ج:جب سرکاری ملازمین اپنے اختیارات کے تحت رُعب جماتے ہیں ۔
س:کس عمل سے دلی سکون ملتاہے ج:کسی کی جائز مدد کرکے۔
س:کس چیزیا سوچ سے زیادہ خوف آتا ہے ج:کہ خداوند کسی دانستہ/نادانستہ غلطی میں پکڑ نہ لیں پھر سفارش کون کرے گا۔
س:اگر شیطان سے ملاقات ہو جائے تو ج:اُس کی منت کروں گا کہ اب تمہارا کام بہت سارے لوگوں نے شرو ع کررکھا ہے۔
س:آپ کو ملک کا وزیراعظم بنا دیاجائے تو سب سے پہلاکام کیا کریں گے ج:یہ بھیانک خواب میں نہیں دیکھ سکتا۔ البتہ میرٹ اور انصاف بنیاد ہوگی۔ بین الاقوامی دوروں کے دوران قومی زبان اُرد ومیں ہی بات کروں گا۔
س:اہلیان چھچھ کے لیے آپ کا پیغام ج:کافی لوگوں کے پاس اللہ کادیابہت کچھ ہے۔ اپنے بچوں اور جن کے پاس وسائل نہیں ہیں۔ اُن کے بچوں کو اعلیٰ تعلیم دلوائیے۔ آپ پوری دنیا پرکنٹرول کرسکتے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں